Surah fatiha ka wazifa

بچھو کاکاٹنااورسورہ الفاتحہ
حضرت ابوسعید الخدری رضی اللّٰہ تعالیٰ عنہ:ہم ایک ایسی
جگہ پہنچے جہاں ایک عورت ہمارے پاس آئی اور کہا۔ہمارے قبیلہ کےسردارکوبچھونےکاٹ لیاہے کیاتم سے کوئی جھاڑ پھونک کرنےوالا ہے؟ایک شخص ہم میں سے کھڑا ہوگیا(اوراسکےساتھ چلدیا)ہم کومعلوم نہیں تھا کہ وہ ایک اچھاجھاڑ پھونک کرنےوالا ہے۔لیکن اس نے بچھو کےکاٹےکو بزریعہ سورہ الفاتحہ جھاڑ دیااورسردارٹھیک ہوگیا ۔اس نےہمیں بکریوں کاایک جھوڑدیااوردودھ پلایا۔ہم نے اس شخص سےمعلوم کیا کیاتم ایک اچھے جھاڑ پھونک کرنےوالے ہو؟اس پر اس۔شخص نے جواب دیا۔میں ایسا نہیں کرتا ہوں لیکن سورہ الفاتحہ کی مدد سے۔اس نے کہاہم ان بکریوں کوتب تک انپے ساتھ نہیں لے جائیں جب تک ہم اللّٰہ کےرسول صلی اللّٰہ علیہ وسلم سےاس کی تصدیق نہیں کرلیں کہ آیاجھاڑپھونک کامواضع قبول کرناچاہئے یانہیں ۔ہم لوگ اللّٰہ کےرسول صلی اللہ علیہ وسلم کےپاس آئے اوروقعہ گوش گوارکیا۔اس پر اللّٰہ کےرسول صلی اللّٰہ علیہ وسلم نےفرمایا:تم کوکیسے معلوم کہ سورہ الفاتحہ سے جھاڑ پھونک کی جاسکتیں ہے۔لہٰذا جاؤان بکریوں کو آپس میں بانٹ لو جو تم میں وہاں موجود تھے اورمیرا حصہ علیحدہ نکال دو۔

Post a Comment

0 Comments